وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کی ناقابل یقین ویڈیو لیک کرنے والا اپنے انجام کو پہنچ گیا ۔۔۔!!! ناقابل یقین سزا دے دی گئی

لاہور(ویب ڈیسک )گزشتہ دنوں وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کی ویڈیو بہت وائرل ہوئی تھی جس میں وہ ایک پروگرام کی تیاری کررہے ہیں اور انہیں اسسٹنٹ کیمرہ مین نے ہیڈ فون لگا یا تو انہوں نے پوچھا کہ کیا دونوں سائیڈز سے آواز آئے گی ؟۔اب یہ بات سامنے آرہی ہے کہ ویڈیو لیک ہونے کے

بعد کیمرہ مین اور اسسٹنٹ کیمرہ مین کو نوکری سے فارغ کردیا گیا ہے ۔تفصیلات کے مطابق چند روز قبل نجی نیوز چینل دنیا نیوز کے پروگرام میں انٹر ویو دینے کے لیے وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار تیار ہو رہے تھے ،اس دوران اسسٹنٹ کیمرہ مین نے ان کے کانوں میں ہیڈ فون لگائے تو وزیراعلیٰ پنجاب نے بڑی سادگی سے سوال کیا کہ کیا یہ ہیڈ فون کے دونوں اطراف سے آواز آئے گی ؟اس معصومانہ سوال پر سوشل میڈ یا صارفین نے عثمان بزدار کو تنقید کا نشانہ بنا یا ۔اب مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ٹوئٹر پر صحافی ثاقب راجہ نے بتا یا ہے کہ آپ لوگوں نے چار دن عثمان بزدار کی سادگی اور ہیڈ فون پر خوب مذاق اڑا لیا اب وہ کیمرہ مین اور اسٹنٹ کیمرہ جو ہیڈ فون لگا رہے تھے نوکری سے فارغ ہوگئے کون کون انکے گھر کفالت کی ذمہ داری لے گا ؟۔جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار نے رواں سال اکتوبر کے آخری ہفتے میں اورنج لائن میٹروٹرین چلانے کی منظوری دے دی۔ ذرائع کے مطابق وزیراعلی کی زیرصدارت کابینہ اجلاس میں میٹروٹرین کوجلد آپریشنل کرنےکی تائید کی گئی ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ پنجاب کابینہ نے اورنج لائن میٹرو ٹرین کا کرایہ 40 روپے مقرر کیا ہے۔ خیال رہے کہ سابقہ دور حکومت میں شروع کیے گئے ایک ارب 62 کروڑ ڈالر کی لاگت کے اس منصوبے کو دسمبر2017 میں مکمل ہونا تھا لیکن عدالتی حکم امتناع اور حکومتوں کی تبدیلی کے باعث یہ منصوبہ تقریبا 3 سال کی تاخیر کا شکار ہوا۔ سابق وزیراعلی پنجاب شہباز شریف نے اگست2015 میں اورنج لائن ٹرین کا کام شروع کرایا تھا اور 3 مرتبہ کو اس کو آزمائشی طور پر چلایا بھی جاچکا ہے۔

loading...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *